سیستان و بلوچستان پورٹس اینڈ شپنگ کے ڈائریکٹر بہروز آقائی نے کہا:

ہندوستان کے لیے شہید بہشتی پورٹ سے افغانستان کی پہلی منجمد اشیاء کی برآمدی کھیپ/ چابہار بندرگاہ کے کنٹینری کھیپوں کی ترسیل کے مرکز بننے کی قابلیت۔

ہندوستان کے لیے شہید بہشتی پورٹ سے افغانستان کی پہلی  منجمد  اشیاء کی  برآمدی کھیپ/  چابہار بندرگاہ کے کنٹینری کھیپوں کی ترسیل کے مرکز بننے کی قابلیت۔
سیستان و بلوچستان پورٹس اینڈ شپنگ کے ڈائریکٹر نے ہندوستان کے لیے افغانستان کی پہلی منجمد اشیاء کی برآمدی کھیپ کی ،شہید بہشتی پورٹ سے ترسیل کی خبر دی

سیستان و بلوچستان پورٹس اینڈ شپنگ کے خبررسان دفتر کے مطابق بہروز آقائی نے کہا :

   افغانستان کی پہلی برآمداتی فریجڈکھیپ جو  انگور   پر مشتمل ہے، چابہار بندرگاہ  کی شہید بہشتی پورٹ سے ہندوستانی بندرگاہ  نواشیوا کو برآمد ہوئی۔

انہوں نے مزید یہ کہا کہ چابہار بندرگاہ کی منجمد اشیاء کی 150 کنٹیرز کی لوڈ اور اِن لوڈ کی  گنجائش پر مشتمل مرکزی سائیٹ بنائی جارہی ہے۔ انہوں نے بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ موجودہ حالات میں چابہار بندرگاہ کی شہید بہشتی پورٹ، منجمد اشیاؤ کی کھیپ کی نگہداشت کے لئے کولڈ سوریج کی عبوری سہولت رکھتی ہے اور اس میں160 منجمد کھیپوں کی نگہداشت  کےکنٹینرز کی سہولیات موجود ہیں۔  

سیستان و بلوچستان پورٹس اینڈ شپنگ کے ڈائریکٹر جنرل نے مزید یہ کہا کہ خالی کنٹینروں کی پہلی کھیپ بھی اندرون ملک کی برآمداتی کھیپوں  اور افغانستان جیسے دوسرے ملکوں کے سامان تجارت پہنچانے کے لئے شہید بہشتی پورٹ پہنچی۔

آقائی نے یہ بھی وضاحت کی کہ مستقبل قریب میں شہید بہشتی پورٹ برآمدی اور مشرق میں کنٹینری کھیپوں  کی ٹرانزیٹ کا مرکز بنے گی۔ نیز انہوں یہ بھی کہا کہ: چابہار بندرگاہ کی ممتاز جغرافیائی محل وقوع اور اس کے مناسب انفراسٹرکچر اور اس میں باقاعدہ کنٹینر شپنگ لائنیں، ایسی ممتاز خصوصیات ہیں جس میں منجمد اور عام ترانزیٹی کھیپوں کے لین دین کی گنجائش کو اضافہ کرے گی۔

انہوں نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ  دیگر پورٹوں کی بہ نسبت خاص رقابتی ٹیرف اور ایرانی کھیپوں کی برآمدات یا افغانستان کے برآمداتی سامان کی خاص طور پر اس بندرگاہ سے ہندوستان کے لئے ٹرانزیٹ کی ترسیل کی خاص سہولیات بنائی گئی ہیں۔  
Sep 8, 2019 09:39

نظرات بینندگان

کریکٹر بایاں: 500
تبصرہ کی ضرورت ہے